Breaking News

پریاگ راج کمبھ سے قبل گنگا کو شفاف بنادیا جائے گا:یوگی

لکھنؤ:21دسمبر(یواین آئی)وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے بدھ کو کہا کہ گنگا فطرت کی طرف سے اترپردیش کو ایک منفرد تحفہ ہے۔ یہ ندی ریاست کے ایک بڑے حصے کو سیراب کرتی ہے۔ ساتھ ہی ہمارے عقیدے کا مرکزی پوائنٹ ہونے کے ساتھ ساتھ ہی ہماری معیشت کی بنیاد بھی ہے۔نمامی گنگے پروجکٹ کی پیش رفت کا جائزہ لیتے ہوئے یوگی نے کہا کہ گنگا و معاون ندیوں کو ‘اورل۔نرمل(تواتر و شفاف)بنانے کے عزم کے ساتھ نمامے گنگے پروجکٹ کے اطمینان بخش نتائج دیکھنے کو ملے ہیں۔ اس مہم میں مرکزی و ریاستی حکومت کی کششوں میں عوامی تعاون بھی موصول ہورہا ہے۔ آج گنگا ندی میں ڈالفن کی واپسی ہوئی ہے تو تکنیک کا استعمال کر کے ندیوں کو شفاف بنایا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ نمامی گنگے پروجکٹ گنگا کے ساتھ ساتھ معاون ندیوں کے لئے بھی ہے۔ کانپور کے جاج مئو اور سیامئو میں گنگا ندی میں گندے پانی کو گرنے سے روکنے کے لئے موثر کوششیں کی جارہی ہیں۔ آج یہ سیلفی پوائنٹ بن گیا ہے۔ پریاگ راج کمبھ 2025 کے آغاز سے قبل گنگا کو ‘اورل۔نرملبنانے کا عزم پورا کرنا ہوگا۔ ندیوں کو سیوریج کے گندگی اور پانی کو آلودہ ہونے سے بچانے کے لئے ایس ٹی پی لگائے جانے کی کاروائی میں تیزی کی توقع ہے۔وزیر اعلی نے کہا کہ گنگا سمیت سبھی ندیوں کی تواتر و شفافیت کو یقینی بنانے کے لئے کوششیں جاری ہیں۔ گنگا ندی عقیدے کے ساتھ معیشت کا سہارا بھی بن رہی ہے۔ارتھ گنگامہم کا سب سے زیادہ فائدہ ان کروڑوں لوگوں کو ہوگا جن کی روزی۔روٹی کا انحصار گنگا پر ہی منحصر ہے۔ ارتھ گنگا سے جی ڈی پی میں تین فیصدی کی معاونت کے ہدف کے ساتھ ہمیں ٹھوس کوششیں کرنی ہونگی۔ ماہرین کی مدد سے اسے ایک ماڈل کے طور پر فروغ دئیے جانے کی کوششیں کی جائیں۔انہوں نے کہا کہ کسانوں کی آمدنی بڑھانے اور زہر سے پاک کھیتی کو بڑھاوا دینے کے مقصد سے ریاستی حکومت نے گنگا کے دونوں ساحلوں پر 05۔05کلو میٹر تک قطرتی کھیتی کی حوصلہ افزائی کے اچھے نتائج دیکھنے کو ملے ہیں۔ ریاست میں 27اضلاع گنگا سے جڑے ہوئے ہیں۔ اس کے علاوہ بندیل کھنڈ کے ساتھ اضلاع میں قدرتی کھیتی کے لئے خصوصی مہم شروع کی گئی ہے۔ موجود وقت میں تقریبا 85ہزار ہیکٹر زمین پر قدرتی کھیتی ہورہی ہے۔ اس بار یہاں پیدوار اچھی ہوئی ہے۔ زیرو بجٹ والی اس کھیتی کے اچھے نتائج کی تقابلی رپورٹ کے ساتھ کسانوں کو بیدار کیا جائے۔ ریاستی سطح پر قدرتی کھیتی بورڈ بھی تشکیل دیا گیا ہے۔قدرتی کھیتی کی مہم سے زیادہ کسانوں کو جوڑا جانا چاہئے۔
یوگی نے کہا کہ اب تک ریاست میں 66180ہیکٹررقبے کو آرگنک فارمنگ کے تحت لایا گیا ہے۔ ایک لاکھ سے زیادہ کسان آرگنک کھیتی سے مستفید ہورہے ہیں۔ سبھی کسانوں کو مرکزی حکومت کی آرگنگ کھیتی پورٹل سے جوڑا جائے۔ آرگنگ پروڈکٹ کی شناخت کرنے اور کوالٹی کو یقینی بنانے کے لئے سبھی ڈویژنل دفاتر پر لیباریٹری کا قیام کیا جائے۔ اسی طرح سبھی زرعی منڈیوں میں آرگنک پروڈکٹ کے آوٹ لیٹ بھی قائم کئے جائیں۔
انہوں نے کہا کہ گنگا کا گھاٹوں کے کنارے متعدد تیرتھ چھیتر ، تاریخی اور تہذیبی اہمیت کے حامل مقامات اور لامحدود قدرتی خوبصورتی ہے۔ ہمیں ان علاقوں میں سیاحت کے نئے امکانات کو بڑھاوا دینا چاہئے۔ یہاں ایڈونچر ٹورزم، واٹر سپورٹ ٹورزم کے لامحدودامکانات ہیں۔ وزیر اعلی کی کوششوں سے اس سمت میں وارانسی میں حوصلہ افزاء کوششیں ہوئی ہیں۔ ہمیں ریور کروج ٹورزم، واٹر اسپورٹ/کیمپنگ سہولیات کے ساتھ وائلڈ لائف ٹورزم کے ماڈل کو فروغ دینا چاہئے۔
خاتون اپنی مدد آپ گروپوں، ریٹائرڈ فوجیوں وغیرہ کی مدد سے گنگا نرستی فروغ دینے کی کوششیں کی جائیں۔نمامی گنگے کے تجربات سے سبق لیتے ہوئے ندی کنارے آباد شہروں کی اسکیم بنانے میں نئی ندی پر مرکوز سوچ کی ضرورت ہے۔ یہ شہر کے ماسٹر پلان کا حصہ ہونا چاہئے۔ آئی آئی ٹی کانپور کے تکنیکی معاونت سے اس ضمن میں ضروری کاروائی کی جائے۔ ندی ۔ثقافت کے تئیں بڑے پیمانے پر بیداری بڑھائے جانے کی ضرورت ہے۔ آبی تحفظ،ندیوں کی صفائی، ندیوں کی بحالی، صفائی مہم سے بچوں کو بھی جوڑنا چاہئے۔ سیکنڈری جماعتوں کے نصاب میں اس مضمون کو شامل کیا جائے۔
وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں سال 2019 میں نیشنل گنگا کونسل کی پہلی میٹنگ کانپور میں منعقد ہوئی تھی۔ اب آئندہ 30دسمبر کو دوسری میٹنگ ہونی ہے۔

About awazebihar

Check Also

ابھیشیک بنرجی کی مشکلات میں اضافہ ‘ تحقیقات متاثر نہ ہونے کی ہدایت

کلکتہ 29ستمبر (یواین آئی)کلکتہ ہائی کورٹ نے ترنمول کانگریس کے جنرل سیکریٹری ابھیشیک بنرجی کیلئے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *