اردو اخبارات میں ہندی میں اشتہارات کی اشاعت پر مشاعرے میںہنگامہ

آپ سرکار میں ہیں تو آپ اردو کے مسائل کیوں نہیں حل کرواتے۔؟۔غلام غوث سےمشہور صحافی ڈاکٹر ریحان غنی کا سوال

پٹنہ (اے بی این) کلیم اللہ کلیم دوست پوری ادبی ایوارڈ کمیٹی کے زیر اہتمام اتوار کو مقامی اے این سنہا انسٹی چیویٹ میں ایک آل انڈیا مشاعرہ منعقد کیا گیا۔ اس کا افتتاح جنتا دل یو رہنما اور رکن قانون ساز کونسل پروفیسر غلام غوث نے کیا اور صدارت بزرگ شاعر اور نقاد پروفیسر علیم اللہ حالی نے کی۔نظامت کا فریضہ شاعراور ڈرامہ نگار قاسم خورشید نےانجام دیا۔اس موقع پر اردو ایکشن کمیٹی کے صدر ایس ایم اشرف فرید‘ نائب صدر ڈاکٹر ریحان غنی جنرل سکریٹری ڈاکٹر اشرف النبی قیصر‘ سکریٹری ڈاکٹر انوار الہدی بھی موجود تھے ۔ مشاعرہ علیم اللہ حالی کی صدارت میں شروع ہوا۔ کلیم اللہ کلیم دوست پوری‘ مولانا مکرم حسین ندوی‘ اثر فریدی‘ میم اشرف‘ شمع کوثر شمع سمیت کئی شعراء اور شاعرات نے اپنے کلام سے سامعین کو محظوظ کیا۔ اس دوران ناظم مشاعرہ نے ایس ایم اشرف فریداور پروفیسر غلام غوث کو اظیار خیال کی دعوت دی ۔ ج غلام غوث تقریر کرنے کے لئے آئے تو وہ بھول گئے کہ وہ مشاعرے میں شرکت کر رہے ہیں یا اردو کانفرنس میں۔ انہوں نے مشاعرے سے ہٹ کر بہار میں اردو تحریک اور اردو زبان کی زبوں حالی کا ذکر کرتے ہوئے اردو اخبارات۔میں ہندی میں سرکاری اشتہارات کی اشاعت کا معاملہ اٹھا دیا اور اس کے لئے اردو اخبارات کے مالکان اور مدیران کو ذمہ دار قرار دیا۔ انہوں نے صرف اسی پر اکتفا نہیں کیا بلکہ انہوں نے یہ بھی کہہ دیا کہ اردو اخبارات صرف اردو کے فروغ کا ڈھنڈھورا پیٹتے ہیں اور ہندی میں اشتہارات چھا پتے ہیں ۔ اس پر اردو ایکشن۔کمیٹی کے نائب صدر اور سینئرصحافی ڈاکٹر ریحان غنی برہم ہو گئے۔ انہوں نے اپنی نشست سے کھڑے ہوکرزور دار آواز میں غلام غوث سے کہا کہ آپ بہت دنوں سے سرکار میں ہیں تو آپ ہندی کی طرح ہی اردو اخبارات کو اردو میں اشتہارات بنوا کر بھیجوانے کا انتظام کیوں نہیں کرواتے؟ اس پر دونوں میں زبردست توتو میں میں ہونے لگی جس کی وجہ سے مشاعرے میں کچھ دیر کے لئے بد مزگی پیدا ہو گئی۔ اس دوران ریحان غنی کو یہ بھی کہتے سناگیا کہ غلام غوث صاحب آپ اردو کے اتنے ہی ہمدرد ہیں تو وزیر اعلی سے کہہ کر آپ اردو اکادمی اور اردو مشاورتی کمیٹی کی تشکیل نو کیوں نہیں کرواتے. ؟ یہ دونوں سرکاری ادارے گذشتہ پانچ برسوں سے ٹھپ کیوں پڑے ہوئے ہیں؟ اس طرح دونوں میں اردو کے معاملے پر کافی وقت تک بحث و مباحثہ ہوتی رہی۔بہت دیر کے بعد معاملہ شانت ہوا تو دو بارہ مشاعرہ شروع ہوا۔

About awazebihar

Check Also

گیان بھون میں 8 دسمبر سے چار روزہ چھوٹی صنعت میلے کا انعقاد

پٹنہٖ (پریسریلیز) چھوٹی صنعت کا میلہ اسمال ادیوگ بھارتی بہار ریاستی یونٹ کی طرف سے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *